یقین دہانی کے باوجود بھی کشمیری پنڈت ملازمین کا احتجاج تیرہ روز بھی جاری رہا

یقین دہانی کے باوجود بھی کشمیری پنڈت ملازمین کا احتجاج تیرہ روز بھی جاری رہا

سری نگر، 24 مئی : کشمیر صوبے میں پنڈت ملازمین کی جانب سے تیرہ روز بھی اپنی مانگوں کو لے کر احتجاج جاری رہا۔
بتادیں کہ پیر کی شام کو جموں وکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے بڈگام میں کشمیری پنڈتوں کے ساتھ ملاقات کی اور یقین دلایا کہ جائز مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی سعی کی جائے گی۔
یو این آئی اردو کے نامہ نگار نے بتایا کہ 12مئی کو چاڈورہ میں راہول بھٹ کی ہلاکت کے بعد کشمیری پنڈتوں کا احتجاج منگل کے روز بھی جاری رہا۔
انہوں نے بتایا کہ گر چہ لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے پیر کی شام کو بڈگام میں کشمیری پنڈت کالونی کا دورہ کیا اور وہاں احتجاج پر بیٹھے ملازمین کو یقین دلایا کہ اُن کی سیکورٹی کے حوالے سے پختہ انتظامات کئے گئے ہیں۔
ذرائع نے بتایا کہ ڈویژنل کمشنر کشمیر پی کے پول نے احتجاج پر بیٹھے کشمیری پنڈت ملازمین کو منگل سے ڈیوٹیاں جوائن کرنے کی صلاح دی تاہم مظاہرین نے انتظامیہ کی پیشکش کو ٹھکراتے ہوئے احتجاج جاری رکھنے کا اعلان کیا۔
کشمیری پنڈت ملازمین نے ایل جی کو بتایا کہ جب تک نہ اُنہیں جموں یا ملک کی دوسری ریاست میں ٹرانسفر کیا جائے تب تک وہ اپنا احتجاج جاری رکھیں گے۔
کشمیری پنڈتوں کا کہنا ہے کہ وہ بلی کا بکرا نہیں بننا چاہتے بہت ہو گیا اب وقت آگیا ہے کہ اُن کی مانگوں کو حل کرکے اُنہیں ملک کی کسی دوسری ریاست میں تعینات کیا جائے ۔

یو این آئی

Leave a Reply

Your email address will not be published.