ناری شکتی کو با اختیار بنانا جموں و کشمیر انتظامیہ کی اولین ترجیح ہے: منوج سنہا

ناری شکتی کو با اختیار بنانا جموں و کشمیر انتظامیہ کی اولین ترجیح ہے: منوج سنہا
سری نگر:جموں وکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے منگل کے روز سری نگر کے تاریخی لالچوک سے سی آر پی ایف کی خواتین بائیک ریلی کو جھنڈی دکھا کر روانہ کیا۔
انہوں نے کہا کہ ناری شکتی کو با اختیار بنانا اور ان کو تمام حقوق فراہم کرنا جموں و کشمیر انتظامیہ کی اولین ترجیح ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ناری شکتی جموں وکشمیر کی تعمیر و ترقی میں اہم رول ادا کر رہی ہیں۔

موصوف لیفٹیننٹ گورنر نے ان باتوں کا اظہار ‘ایکس’ پر اپنے سلسلہ وار پوسٹس میں کیا۔

انہوں نے کہا: ‘سری نگر کے مشہور لالچوک سے سی آر پی ایف انڈیا خواتین بائیک مہم کو جھنڈی دکھا کر روانہ کیا’۔

ان کا کہنا تھا: ‘یہ مہم ملک کے 40 اضلاع کو عبور کرکے 2 ہزار 1 سو 34 کلو میٹر سے زیادہ کا فاصلہ طے کرکے 31 اکتوبر کو سابق نائب وزیر اعظم اور جدید ہندوستان کو متحد کرنے والے سردار ولبھ بھائی پٹیل کے یوم پیدائش کے موقع پر ایکتا نگر گجرات پہنچے گی’۔

مسٹر سنہا نے کہا کہ ناری شکتی کو باختیار بنانا اور ان کو تمام حقوق فراہم کرنا جموں کشمیر انتظامیہ کا عزم اور اولین ترجیح ہے۔

انہوں نے کہا: ‘ہماری بیٹیاں تعلیمی، تحقیق، اختراعات اور کاروباری شعبے میں ایک پر جوش معاشرے کی تشکیل کے خوابوں کو پورا کرنے کے لئے کامیابی کی سیڑھیاں طے کر رہی ہیں’۔

لیفٹیننٹ گورنر کا ایک اور پوسٹ میں کہنا تھا: ‘ناری شکتی جموں وکشمیر کی تعمیر و ترقی میں اہم رول ادا کر رہی ہیں’۔

انہوں نے کہا کہ ناری شکتی وکسٹ بھارت کے لئے بھر پور تعاون فراہم کر رہی ہیں اور ناری شکتی سے ہی مستقبل میں انسانی وقار اور سماجی مساوات یقینی بنا جائے گا’۔

یو این آئی

Leave a Reply

Your email address will not be published.