کورونا کیسز میں ہو رہے اضافے کے پیش نظر گھبرانے کے بجائے ہوشیار رہنے کی ضرروت:ڈائریکٹر سکمز

کورونا کیسز میں ہو رہے اضافے کے پیش نظر گھبرانے کے بجائے ہوشیار رہنے کی ضرروت:ڈائریکٹر سکمز

سری نگر،27 جون: ملک کے کچھ حصوں میں کورونا کیسز میں درج ہو رہے اضافے کے پیش نظر شیر کشمیر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (سکمز) صورہ سری نگر کے ڈائریکٹر ڈاکٹر پرویز احمد کول نے لوگوں سے گھبرانے کے بجائے ہوشیار رہنے کی تاکید کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ صورتحال تشویش ناک نہیں ہے لیکن کورونا پروٹوکال کو نظر انداز کرنے سے صورتحال خراب ہوسکتی ہے۔
موصوف ڈائریکٹر نے پیر کو اپنے ایک بیان میں کہا: ’صورتحال تشویش ناک نہیں ہے کیونکہ مثبت معاملوں کی شرح ابھی اس قدر زیادہ نہیں ہے لہذا گبھرانے کی ضرورت نہیں ہے لیکن کورونا گائیڈ لائنز کو نظر انداز کرنے سے صورتحال بگڑ سکتی ہے‘۔
انہوں نے ملک کے کچھ حصوں میں کورونا کیسز میں درج ہو رہے اضافے کے پیش نظر لوگوں کو احتیاط برتنے کی تاکید کرتے ہوئے کہا کہ کورونا کیسز میں درج ہو رہا اضافہ ہمیں احتیاطی تدابیر پر عمل پیرا ہونے کی دعوت دے رہا ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ ہمیں اس وبا کو دور رکھنے کے لئے ماسک لگانے اور ہاتھوں کو بار بار دھونے کی ضرورت ہے۔
ڈاکٹر پرویز احمد کول نے کہا کہ یونیورسٹی آف واشنگٹن کے ماڈلنگ اسٹیڈیز کے آئی ایچ ایم ای جیسے معتبر ادارے جموں و کشمیر اور لداخ یونین ٹریٹریوں میں مستقبل میں کورونا کی کسی بھی تازہ لہر کی پیش گوئی نہیں کرتے ہیں۔
انہوں نے کہا: ’تاہم کورونا سے بچنے کے لئے گائیڈ لائنز پر عمل در آمد ضروری ہے‘۔
ان کا کہنا تھا کہ کورونا کے مثبت معاملوں کی شرح اتنی زیادہ نہیں ہے اور حکام صورتحال پر کڑی نگرانی رکھے ہوئے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ چونکہ دنیا اور ملک کے کچھ حصوں میں کیسز بڑھ رہے ہیں لہذا ہمیں بھی گھبرانے کے بجائے چوکنا رہنے کی ضرورت ہے۔

یو این آئی

Leave a Reply

Your email address will not be published.