ہندی صرف ایک زبان نہیں بلکہ ایک بائیگرافیکل طاقت ہے: ڈاکٹر نشنک

نئی دہلی ، مرکزی وزیر تعلیم ڈاکٹر رمیش پوکھریال نشنک نے کہا ہے کہ ہندی صرف ہمارے لئے زبان نہیں ہے بلکہ یہ ہماری بائیگرافیکل قوت اور ہوا کی طرف زندگی دیتی ہے جو ہمیں نہ صرف ایک دوسرے سے جوڑتی ہے بلکہ اس سے یہ احساس بھی ملتا ہے کہ جب دماغ اور روح مل جاتے ہیں تو جغرافیائی فاصلے سے کوئی فرق نہیں پڑتا ہے۔
ڈاکٹر نشنک نے ماریشش میں منائے جارہے یوم عالمی ہندی کے موقع پر ماریشس کے عوام سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر نشنک نے کہا کہ ہندی دنیا کی تیسری سب سے زیادہ بولی جانے والی زبان ہے۔
انٹرنیٹ کے دور میں ہندی نے اپنی عالمی رسائی میں اضافہ کیا ہے۔ ای میل ، ایس ایم ایس ، ای کامرس ، ای بک ، انٹرنیٹ میں ہندی کو آسانی سے قبول کیا جارہا ہے۔ ہندی دنیا کی منڈی کی زبان بن رہی ہے۔ گوگل ، اوریکل ، مائیکروسافٹ اور آئی بی ایم جیسے ملٹی نیشنل کمپنیاں ہندی کو فروغ دے رہی ہیں۔ اس سے ہندی کی بڑھتی ہوئی طاقت کا اظہار ہوتا ہے۔ ہندی تیزی سے ٹکنالوجی کی زبان بن رہی ہے۔ برطانیہ ، جرمنی ، چین اور امریکہ جیسے بڑے ممالک میں ہندی اسکولوں میں کالجوں تک پڑھائی جانے والی زبان بن گئی ہے۔ پوری دنیا کے تقریبا 115 تعلیمی اداروں میں ہندی پڑھائی جارہی ہے۔ ہمیں مل کر اسے اقوام متحدہ میں وقار بخشوانا ہے۔
عالمی یوم ہندی کے مقصد پر ڈاکٹر نشنک نے کہا کہ “10 جنوری 1975 کو ناگپور میں پہلی عالمی ہندی کانفرنس کا انعقاد کیا گیا تھا۔ اس میں 30 ممالک کے 122 مندوبین نے شرکت کی تھی۔ ہندی کے عالمی دن کا مقصد ہندی کو پوری دنیا میں فروغ دینا ہے تاکہ ہندی کو پوری دنیا میں ایک بین الاقوامی زبان کے طور پر جانا جائے۔ اگرچہ ہم 2006 سے ہندی کا عالمی دن منا رہے ہیں ، اس کی جڑیں بہت گہری ہیں۔
مسٹر نشنک نے عالمی منظر نامے پر ہندی کی ترقی کے لئے ماریشس کے کئے گئے اقدامات کی تعریف کی اور کہا کہ “مجھے خوشی ہے کہ یہاں ہندی کی نسل در نسل تیار ہورہی ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published.