کورونا کے باعث تعلیم چھوڑنے والے بچوں کو واپس لانے کے لئے سخت کاوشوں کی ضرورت: ڈائرکٹر اسکول ایجوکیشن کشمیر

کورونا کے باعث تعلیم چھوڑنے والے بچوں کو واپس لانے کے لئے سخت کاوشوں کی ضرورت: ڈائرکٹر اسکول ایجوکیشن کشمیر

سری نگر،29 مارچ: ڈائریکٹر اسکول ایجوکیشن کشمیرتصدق حسین میر نے کورونا کے باعث تعلیم ادھوری چھوڑنے والے بچوں کو واپس لانے کی کوششوں کو مزید مستحکم کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

انہوں نے ضلع نوڈل افسروں، ماسٹر ٹرینرس اور ایجوکیشنل منیجمنٹ انفارمیشن سسٹم (ای ایم آئی ایس) کوڈینیٹرس کے دو روزہ ورکشاپ سے اپنے خطاب میں کہا کہ کورونا کی وجہ سے اسکول کافی مدت تک بند رہنے سے کئی بچوں نے تعلیم ادھوری چھوڑ دی ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ ان بچوں کو واپس لانے کے لئے کی جانے والی کاوششوں کو مزید مستحکم کیا جائے۔

موصوف ناظم تعلیم نے کہا کہ اب چونکہ اسکول کھل گئے ہیں لہذا ضرورت اس بات کی ہے کہ ہر ایسے بچے کو واپس اسکول لایا جائے۔
ورکشاپ سے ایجوکیشن اسپسلیسٹ جموں و کشمیر یو این آئی سی ای ایف دانش عزیز نے بھی خطاب کیا۔

انہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر ایسوسی ایشن آف سوشل ورکرس (جے کے اے ایس ڈبلیو) محکمہ تعلیم کو سپورٹ کرنے کے لئے مختلف تکنیکی وسائل فراہم کرے گا۔۔
ورکشاپ میں وادی کے دس اضلاع سے تعلق رکھنے والے تیس ڈی این اوز، ماسٹر ٹرینرس اور ای ایم آئی ایس نے شرکت کی۔

جے کے اے ایس ڈبلیو کے ایگزیکیٹو ڈائریکٹر اشفاق احمد متو نے ورکشاپ کے اختتام پر اپنے تاثرات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کورونا کے باعث شعبہ تعلیم کو گوناگوں چلینجز کا سامنا ہے۔
انہوں نے کہا کہ ان چلینجز کا مقابلہ کرنے کے لئے حکومت اور سول سوسائٹی کو شانہ بشانہ کام کرنے کی ضرورت ہے۔

یو این آئی

Leave a Reply

Your email address will not be published.