بہوری کدل میں بھیانک آتشزدگی، تواریخی بازار مسجد ،6شاپنگ کمپلیکس اوردس رہائشی مکان خاکستر 8اہلکار زخمی

بہوری کدل میں بھیانک آتشزدگی، تواریخی بازار مسجد ،6شاپنگ کمپلیکس اوردس رہائشی مکان خاکستر 8اہلکار زخمی

سری نگر: جموں وکشمیر کی گرمائی راجدھانی سری نگر کے بہوری کدل علاقے میں آتشزدگی کی ایک بھیانک واردات میں مسجد شریف، 6شاپنگ کمپلیکس اور دس رہائشی مکان خاکستر ہوئے ہیں۔

آگ بجھانے کی کارروائی کے دوران 8فائر مین زخمی ہوئے جنہیں نزدیکی ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں سے دو کو  صدر ہسپتال سری نگر ریفر کیا گیا۔

معلوم ہوا ہے کہ 24فائر ٹینڈروں کی مدد سے آگ پر قابو پایا گیا تاہم آتشزدگی کی اس واردات میں کروڑوں روپیہ مالیت کی املاک راکھ کے ڈھیر میں تبدیل ہوئی۔

اطلاعات کے مطابق پائین شہر کے گنجان آبادی والے علاقے بہوری کدل سری نگر میں پیر کی سہ پہر آگ نمودار ہوئی جس نے آناً فاناً مسجد شریف ، چھ شاپنگ کمپلیکس اور متعدد رہائشی مکانوں کو لپیٹ میں لے لیا۔

معلوم ہوا ہے کہ فائر اینڈ ایمرجنسی کے جوائنٹ ڈائریکٹر راج کمار رینا کی سربراہی میں شہر سری نگر کا پورا عملہ 24فائر ٹینڈروں سمیت جائے موقع پر پہنچ گیا اور آگ بجھانے کی کارروائی شروع کی۔

نامہ نگار نے بتایا کہ فائر اینڈ ایمرجنسی اہلکاروں کو آگ بجھانے کے دوران کافی دقتوں کا سامنا کرناپڑ کیونکہ علاقہ کافی گنجان ہے اور شدید آتشزدگی کی وجہ سے بیک وقت کئی ڈھانچوں سے آگ کے شعلے بلند ہوئے۔

انہوں نے بتایا کہ جوں ہی مسجد شریف کی اوپری منزل سے آگ نمودار ہوئی تو متعدد گیس سلنڈر زور دار دھماکوں کے ساتھ پھٹ گئے اور آگ نے اپنے متصل شاپنگ کمپلیکس اور رہائشی مکانوں کو لپیٹ میں لے لیا۔

 آگ کی اس واردات میں مسجد شریف ، چھ شاپنگ کمپلیکس اور دس رہائشی مکانوں کو نقصان پہنچا ہے۔

فائر اینڈ ایمرجنسی کے ایک سینئر عہدیدار نے یو این آئی اردو کو بتایا کہ بہوری کدل میں بھیانک آتشزدگی کی وجہ سے مسجد شریف اورچھ شاپنگ کمپلیکس اور دس ڈھانچوں کو نقصان پہنچا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ آگ بجھانے کی کارروائی کے دوران آٹھ فائر مین زخمی ہوئے جنہیں علاج ومعالجہ کی خاطر غوثیہ ہسپتال خانیار منتقل کیا گیا جہاں سے دو کو صدر ہسپتال سری نگر ریفر کیا گیا۔

مقامی لوگوں نے بتایا کہ آگ کی اس واردات میں پوری بستی خاکستر ہو چکی ہے۔

انہوں نے کہاکہ کم از کم 15گیس سلنڈر زور دار دھماکوں کے ساتھ پھٹ گئے جس وجہ سے آگ نے بازار مسجد کی بستی کو پوری طرح سے اپنی لپیٹ میں لے لیا اور چند منٹوں کے اندر اندر ہی زائد از ایک درجن رہائشی مکان خاکستر ہوئے ۔

فائر اینڈ ایمرجنسی کے جوائنٹ ڈائریکٹر راج کمار رینا نے یو این آئی اردو کو بتایا کہ بہوری کدل آتشزدگی میں بہت سارے تجارتی اور رہائشی ڈھانچے خاکستر ہوئے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ فائر اینڈ ایمرجنسی اہلکاروں نے اپنی جانوں کو جوکھم میں ڈال کر متعدد رہائشی مکانوں اور تجارتی مراکز کو خاکستر ہونے سے بچایا۔

انہوں نے مزید بتایا کہ ابتدائی اعدادوشمار کے مطابق آگ کی اس واردات میں مسجد شریف ، چھ کمرشل عمارتیں اور آٹھ کے قریب رہائشی مکانوں کو نقصان ہوا ہے۔

انہوں نے کہاکہ نقصان میں اضافہ ہونے کو بھی خارج از امکان قرار نہیں دیاجاسکتا ۔

جوائنٹ ڈائریکٹر کا کہنا تھا کہ 24فائر ٹینڈر رات آٹھ بجکر 30منٹ پر بھی آگ بجھانے کی کارروائی میں مصروف تھے۔

انہوں نے کہاکہ چونکہ اندھیرا چھا گیا جس وجہ سے نقصان کے بارے میں وثوق کے ساتھ کچھ نہیں کہا جاسکتا تاہم یہ بھیانک آتشزدگی کا واقع تھا اور اس میں متعدد کمرشل اور رہائشی ڈھانوں کو نقصان پہنچا ہے۔

یہ رپورٹ فائل کرنے تک 24فائر ٹینڈر آگ بجھانے کی کارروائی میں مصروف تھے۔ اس سلسلے میں مزید تفصیلات کا انتظار ہے۔

یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ 26نومبر 2023کو بھی تواریخی بازار مسجد میں آگ بھڑک اٹھنے کی وجہ سے مسجد شریف کی اوپری منزل کو نقصان پہنچا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.