دفعہ 370کو ہمیشہ ہمیشہ کے لئے دفن کیا گیا، دہشت گردی اور علیحدگی پسند ی ماضی کی داستان بن گئے : انوراگ ٹھاکر

دفعہ 370کو ہمیشہ ہمیشہ کے لئے دفن کیا گیا، دہشت گردی اور علیحدگی پسند ی ماضی کی داستان بن گئے : انوراگ ٹھاکر

جموں:اطلاعات و نشرعات کے مرکزی وزیر انوراگ ٹھاکر نے ہفتے کے روز کہا کہ بھارتیہ جنتاپارٹی نے دفعہ 370کو ہمیشہ ہمیشہ کے لئے دفن کیا ہے۔انہوں نے کہاکہ کشمیر میں علیحدگی پسندی اور دہشت گردی قصہ پارینہ بن چکے ہیں ۔ان کے مطابق آج بغیر خوف کے لوگ لالچوک میں ترنگا لہرا رہے ہیں جو اس بات کی غماز ہے کہ کشمیر میں حالات یکسر تبدیل ہوگئے ہیں۔ان باتوں کا اظہار موصوف نے جموں میں انتخابی جلسے سے خطاب کے دوران کیا۔انہوں نے کہاکہ بھارتیہ جنتاپارٹی نے گزشتہ دس سالوں کے دوران ملک کو ترقی کی بلندیوں پر پہنچا دیا ۔
مرکزی وزیر نے کہا :’بی جے پی کی قیادت میں ملک اس وقت پانچویں بڑی معیشت کے طورپر ابھر کرسامنے آیا ہے۔ ‘
ان کے مطابق موجودہ مرکزی حکومت نے مضبوط بھارت کو یقینی بنانے کی خاطر زمینی سطح پر عملی اقدامات اٹھائیں اور آج پوری دنیا میں بھارت کا ڈنکا بج رہا ہے۔انوراگ ٹھاکر نے کہاکہ تین خاندانوں نے جموں وکشمیر کو تباہی کی اور دھکیل دیا لیکن دفعہ 370کی منسوخی کے بعد حالات بہتر ہوئے ہیں۔انہوں نے مزید بتایا کہ مودی جی نے دفعہ 370کو ہمیشہ ہمیشہ کے لئے ختم کیا اور اب یہ قانون واپس نہیں آئے گا۔
مرکزی وزیر برائے اطلاعات و نشرعات نے کہاکہ بھاجپا نے جموں وکشمیر میں خاندانی راج کو ختم کرنے کی خاطر قربانیاں دی ہیں۔انہوں نے کہا :’کشمیر میں علیحدگی پسندی اور دہشت گردی کا خاتمہ ہو گیا ہے۔‘ان کے مطابق گزشتہ دس برسوں کے دوران کشمیر میں بہت کچھ بدلا ہے ، علیحدگی پسندی اور دہشت گردی کا قلع قمع کیا گیا جبکہ تین خاندانوں سے بھی لوگوں کو چھٹکارا ملا ہے۔انہوں نے کہا کہ آج سری نگر کے لالچوک میں بغیر کسی خوف اور ڈر کے لوگ ترنگا لہرا رہے ہیں۔مرکزی وزیر نے کہاکہ جموں وکشمیر میں گزشتہ سال زائد از دو کروڑ سیاحوں نے سیاحتی مقامات کی سیر کی ۔
آج کے دور میں سری نگر میں فارمولہ ون کی گاڑیاں چل رہی ہیں، جی ٹونٹی کے کامیاب انعقاد سے جموں وکشمیر میں نئے دور کا آغاز ہوا ۔ اپنی تقریر میں مرکزی نے مزید کہا کہ موجودہ حکومت نے والمیکی سماج اور گوجر وں کو انصاف فراہم کیا۔ ہم نے وہ کرکے دکھایا جو کانگریس نے ستر سالوں کے دوران نہیں کیا ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.